تازہ ترین

کشمیر یونیورسٹی کے نرسنگ طلباء کااحتجاج،فیس میں کمی کرنے کا مطالبہ

7 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(   عکاسی: امان فاروق    )

نیو ڈسک
۔سرینگر// برستی بارش اور برفباری میں کشمیر یونیورسٹی کے جنوبی کیمپس میں زیر تعلیم بی ایس سی نرسنگ کے طلباء نے سرینگر میں احتجاج کرتے ہوئے فیس میں رعایت کا مطالبہ کیا۔سرینگر کی پریس کالونی میں بدھ کو کشمیر یونیورسٹی کے جنوبی کیمپس میں زیر تعلیم بی ایس سی نرسنگ فسٹ ائر کے طالب علم نمودار ہوئے اور حصول انصاف کے حق میں نعرہ بازی کی۔ احتجاجی طلباء نے بینر اور پلے کارڑ بھی ہاتھوں میں اٹھا رکھے تھے جن پر’’ہمیں انصاف دو‘‘ کے نعرے درج تھے،جبکہ انہوں نے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر انکی فیس میں کمی کی جائے۔ سفید کوٹوں میں ملبوس طلباء و طالبات نے کہا کہ دیگر نرسنگ کالج سالانہ زیادہ سے زیادہ38ہزار فی کورس کی پیشکش کرتے ہیں تاہم کشمیر یونیورسٹی طلباء سے سالانہ78ہزار روپے فیس وصول کرتی ہے۔ احتجاجی مظاہرے میں شامل ایک طالبہ نے کہا’’ ہم نے اعلیٰ حکام بشمول کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی نوٹس میں بھی یہ بات لائی کہ طلباء کو فیس میں رعایت دی جائے،تاہم انہوں نے ہمارے مطالبے کو نظر انداز کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ کشمیر یونیورسٹی کے جنوبی کیمپس اور دیگر بی ایس سی نرسنگ کالجوں کے ڈھانچے کا بھی آسمان زمین فرق ہیں۔ انہوں نے کہاکہ میں نے اپنے فسٹ ائر میں قریب ایک لاکھ روپے فیس ادا کیااور میرے اہل خانہ اس قدر زیادہ فیس ادا کرنے کے متحمل نہیں ہیں،اس لئے ہم کشمیریونیورسٹی کے منتظمین سے گزارش کرتے ہیں کہ وہ بی ایس سی نرسنگ کے فیس میں کمی کریں۔