تازہ ترین

شاہراہ بھاری پسیوں کی زد میں

وادی کا زمینی اور فضائی رابطہ ایک بار پھر منقطع

7 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

محمد تسکین+اشفاق سعید

۔  28پروازیں منسوخ ،پتھر گرنے سے 12افراد زخمی 

 
 بانہال +سرینگر //محکمہ موسمیات کی پیشگوئی کے عین مطابق پیر پنچال کے آر پار ایک بار پھر تازہ بارشوں،برف باری اور بھاری پسیوں کے سبب21جنوری سے متاثر سرینگر جموں شاہراہ ایک بار پھر بند کردی گئی۔بارشوںاور تازہ برف باری کے سبب کشمیر کا زمینی وفضائی رابطہ بھی ایک بار پھر منقطع ہو گیا۔ اس دوران شاہرہ پر پتھر گر نے کے سبب 12افراد زخمی ہوئے جن میں سے ایک کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ وادی میں اگلے 48گھنٹوں تک تازہ برف باری کا سلسلہ جاری رہے گا ۔محکمہ کے مطابق بدھ اور سنیچر کی درمیانی رات کو پیر پنچال کے آ ر پار برف باری ہو گئی اور 7 فروری کی شام سے وادی میں ایک مرتبہ پھر موسم میں بہتری آئے گی ۔

شاہراہ

جواہر ٹنل اور بانہال کے پہاڑی علاقوں میں ایک فٹ تازہ برفباری اورجموں سرینگرشاہراہ ،مختلف مقامات پر بھاری پسیوں اور پتھروں کے گر آنے کی وجہ سے گاڑیوں کی آمدورفت کیلئے بدھ سے مکمل طور بند رہی ۔منگل کی رات سے 21 جنوری سے مسلسل برفباری اور پسیوں کی مار جھیل رہی جموں سرینگر شاہراہ رام بن اور بانہال کے درمیانی سیکٹر میں کئی مقامات پر پسیاں گرآنے اور بانہال اور ٹنل کے درمیان برفباری کی وجہ سے بدھ کے ٹریفک کیلئے بند رہی۔ رام بن اور رامسو کے درمیان بدھ کی شام تک کئی مقامات پر پتھروں کے گرآنے کا سلسلہ جاری تھا ، جس کی وجہ سے شاہراہ کی بحالی کا کام  متاثر رہا۔ کیلا موڑ ، انوکھی فال، بیٹری چشمہ اور پننتھیال کے درمیان ایک درجن مقامات گرتے پتھروں اور پسیوں کی وجہ سے متاثر رہے۔بدھ کی دوپہر بعد ناشری کے نزدیک بھی شاہراہ پسیوں کی زد آئی جس کی وجہ سے ناشری ٹنل سے جْڑی سابقہ شاہراہ کے بٹوٹ اور ڈوڈہ کے علاقے بھی منقطع ہوگئے۔ کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے ڈی ایس پی ٹریفک رام بن سریش شرما نے بتایا کہ منگل کی رات سے جاری بارشوں کے نتیجے میں رام بن اور رامسو کے درمیان شاہراہ پھر سے پتھروں اور پسیوں کی زد میںآگئی  اور بدھ کی صبح  بیٹری چشمہ کے مقام پر گرآئی ایک بھاری پسی کو چھوڑ کرباقی متاثرہ مقامات پرسڑک کو یکطرفہ ٹریفک کے قابل بنایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بدھ کی صبح گیارہ بجے کے قریب بیٹری چشمہ کے علاقے میں گر آئی ایک بھاری پسی کو ہٹانے کا عمل آج شام تک جاری تھا۔ انہوں نے کہا کہ جواہر ٹنل کے دونوں طرف اٹھ انچ سے ایک فٹ تک برف ریکارڈ کی گئی ہے اور شاہراہ اس سیکٹر میں بھی بند ہے۔ انہوں نے کہا کہ جموں اور رام بن کے درمیان شاہراہ بدھ کی شام تک قابل آمدورفت تھی ۔ادھر رامسو علاقے میں پہاڑی سے پتھر گر آئے اور ایک گاڑی اْن کی زد میں آگئی۔حکام کے مطابق اس حادثے میں ایک خاتون سمیت12افراد زخمی ہوگئے۔ خاتون کی شناخت بہار کی رہنے والی کے طور ہوئی ہیبتایا جاتا ہے کہ بہار کے رہنے والے9اور اتر پردیش و مدھیہ پردیش کے رہنے والے کئی افراد کو لیکر ایک گاڑی سرینگر سے جموں جارہی تھی جب یہ حادثہ پیش آیا۔ گاڑی کا ڈرائیور اننت ناگ کا باشندہ ہے۔

ہوائی پروازیں 

 سرینگربین الاقوامی ہوائی اڈے پر بدھ کو تمام 28پروازیں خراب موسم کی وجہ سے منسوخ ہو گئیں۔حکام کے مطابق پروازوں کی منسوخی ہوائی اڈے پر کم روشنی اور برفباری کی وجہ سے عمل میں لائی گئی ۔ ایس ایس پی ائیر پورٹ طاہر سلیم نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سرینگر ایئر پورٹ سے تمام 28پروازیں خراب موسم کی وجہ سے منسوخ ہو گئیں ۔انہوں نے کہا کہ صبح ہی برف باری اور حد نگاہ معمول سے کم ہونے کے سبب جموں دہلی اور ملک کے کئی ریاستوں سے نہ ہی کوئی پرواز یہاں آسکی اور نہ ہی یہاں سے کوئی پرواز اڑان بھر سکی ۔ 

وسطی کشمیر

وسطی کشمیر کے ضلع گاندربل میں بارشیں جبکہ سونہ مرگ ، گنڈ، کلن اور گگن گیر میں بھاری برف باری کا سلسلہ بدھ کی صبح سے جاری رہا۔ سونہ مرگ میں 2فٹ تازہ برف ہوئی جبکہ گگن گیر میں 1 فٹ ،کلن اور گنڈ میں 9انچ زوجیلا میں 2فٹ تازہ برف جمع ہو گئی تھی ۔بڈگام ضلع کے چرار شریف، خان صاحب، بیروہ ، توسہ میدان ، کھاگ میں شام دیر گئے تک بھاری برف باری ہو رہی تھی جبکہ ضلع میں تازہ 5انچ برف جمع ہوئی تھی ۔

شمالی کشمیر 

بارہمولہ ضلع میں منگل کی شام کو شروع ہوا تازہ برف باری اور بارشوں کا سلسلہ بدھ کو دن بھر وقفے وقفے سے جاری رہا۔ سرینگر مظفر آباد شاہراہ پر تین سے چار انچ تازہ برف جمع ہوئی ۔گلمرگ ،ٹنگمرگ ،پٹن ،رفیع آباد ،قصبہ بارہمولہ ، حاجی بل ،نارواو ، بونیار اور دیگر میدانی اور بالائی علاقوں میںپانچ سے اٹھ انچ تک تازہ برف باری ریکارڈکی گئی ہے جبکہ افر وٹ ،کونگہ ڈوری اور بابا ریشی کے پہاڑیوں پر بھاری تازہ برف باری ہوئی  ۔ ادھر حاجی بل بارہمولہ سڑک پر بھاری برف جمع ہوئی جس کی وجہ سے علاقہ مکمل طورتحصیل ہیدکواٹر سے منقطع ہوگیا ہے  ۔اوڑی میں صبح سے بارشیں ہو ئیں جبکہ بونیار اور اوڑی کے بالائی علاقوں میں تازہ برف باری کا سلسلہ جاری ہے ۔کپوارہ سے اشرف چراغ کے مطابق کرناہ کے میدانی علاقوں میں 2ایچ سادھنا ٹاپ پر تازہ ایک فٹ ، پھرکیاں ٹاپ پر ڈیڑھ فٹ ، کیرن کے اندروانی علاقوں میں 4انچ مژھل کی زیڈ گلی پر ڈیڑھ فٹ اور اندروانی علاقوں میں 6انچ برف جمع ہوئی ہے۔ میدانی علاقوں میں 6سے8انچ برف جمع ہو گئی تھی ۔کرناہ کپوارہ شاہراہ صرف ایک دن کھلنے کے بعد دوبارہ بند ہو گئی ہے ۔ بانڈی پورہ  میں قریب 3انچ برف جمع ہو چکی تھی جبکہ گریز میں صبح سے ہی برف باری کا سلسلہ جاری تھا ۔رازدان ٹاپ پر تازہ 10انچ برف جمع ہو گئی ہے اور اس طرح کل ملا کر اس درے پر 9فٹ برف جمع ہو چکی ہے ۔

جنوبی کشمیر 

شوپیاں سے شاہد ٹاک کے مطابق ضلع میں صبح ساڑھے 6 بجے سے برفباری کا سلسلہ شروع ہو ا جو شام دیر گئے تک جاری رہا ۔ ضلع کے میدانی علاقوں میں قریب ایک فٹ تازہ برف جمع ہو گئی ہے جبکہ بالائی علاقوں جن میں ہیرپورہ،سیدو،بوہری ہالن،کیلر،چھوٹی پورہ شامل ہیں میں 2 فٹ تازہ برف جمع ہوگئی ہے۔ اسی طرح تاریخی مغل روڈ جو قریب تین ماہ سے گاڑیوں کی آمد رفت کیلئے بند ہے پر پیر کی گلی پر تازہ تین فٹ برف جمع ہو گئی ہے۔ دبجن میں اڑھائی فٹ تازہ برف جمع ہوئی ہے۔ پلوامہ میں بھی صبح سے بارشوں کے ساتھ برف باری ہو رہی تھی ۔کولگام سے خالد جاوید کے مطابق ضلع کے میدانی علاقوں میں دن بھر بارشیں ہوتی رہیںجبکہ نوآباد کے بالائی علاقوں دھمال ہانجی پورہ ، وٹو اہر بل ، نندی مرگ ، وینو کنڈی مرگ علاقوں میں تازہ برف باری کا سلسلہ جاری تھا اور 8انچ برف جمع ہو گئی تھی ۔اننت ناگ سے عارف بلوچ اور ملک عبدالسلام کے مطابق ضلع میں صبح سے ہی بارشیں ہو  تی رہیں جبکہ پہلگام اور کاپرن کے اوپری علاقوں میں تازہ برف باری ہو رہی ہے ۔
 
 

شاہراہ کی بحالی کا کام جاری 

آئی جی پی ٹریفک 

سرینگر /اشفاق سعید / آئی جی پی ٹریفک الوک کمار نے کہا  ہے کہ تازہ برف باری اور بارشوں کے سبب جموں سرینگر شاہراہ پر بدھ کے روز قریب 6مقامات پر پسیاں اور پتھر گرنے کا سلسلہ جاری رہا ۔کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات چیت کے دوران الوک کمار نے کہا کہ تازہ بارشوں اور برف باری سے شاہراہ کے قریب 6مقامات  انوکھی فال ، پنتھیال ، بانہال ، بیٹری چشمہ ، موپتی ، گانگڑوں میں لگاتار دن بھر پسیاں اور پتھر گرنے کا عمل جاری رہا ۔آئی جی پی ٹریفک نے کہا کہ کل بھی موسم خراب ہے اور موسم کو دیکھ کر ہی شاہراہ پر گاڑیوں کو چلنے کی اجازت کے بارے میں سوچ بچار کیا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ اس بار سرما میں شاہرہ کافی دنوں بند رہی ہے کیونکہ لگاتار پسیاں اور پتھر گر رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مسافروں کی خفاظت اور شاہراہ پر معقول ٹریفک کو چلانے کیلئے محکمہ کا عملہ متحرک ہے ۔