تازہ ترین

۔5برس بعد جموں سنٹرل کواپریٹو بنک جنرل باڈی کا اجلاس منعقد

8 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

جموں// جموں سنٹرل کواپریٹو بنک 180 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری سے احیائے نو کی راہ پر گامزن ہے اور گورنر انتظامیہ پیشہ ور بورڈ آف ڈائریکٹرز کی تقرری عمل میں لائے گی ۔ پرنسپل سیکرٹری خزانہ نوین کمار چودھری نے ان باتوں کا اظہار جنرل باڈی کی پہلی میٹنگ میں کیا ۔ یہ میٹنگ پچھلے پانچ برسوں کے دوران پہلی بار منعقد ہوئی ۔ 208 سوسائیٹیوں کے شراکتداروں /سیکرٹریوں سے خطاب کرتے ہوئے نوین چودھری نے بنک کے احیائے نو کیلئے اٹھائے جا رہے اقدامات کے بارے میں جانکاری دی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے مناسب سرمایہ کاری ، نئے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی تقرری اور بنک کے کام کاج میں شفافیت لانے کیلئے مناسب اقدامات کئے ہیں ۔ پچھلے پانچ برسوں کے دوران بنک کی جنرل باڈی کی میٹنگ نہ ہونے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے نوین چودھری نے کہا کہ اب سے یہ میٹنگیں ہر تین ماہ ، چھ ماہ اور ایک سال کے بعد ہوا کریں گی ۔ میٹنگ میں بورڈ آف ڈائریکٹرز بشمول ڈپٹی کمشنر جموں رومیش کمار ، کواپریٹو محکمہ کے سیکرٹری عبدالمجید بٹ ، ناظمِ زراعت ایچ کے راجدھان ، سینئر ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل سیما شیکھر اور چارٹڈ اکاؤٹینٹ راکیش گپتا کے علاوہ جموں و کشمیر بنک کے سابق ایگزیکٹو پرذیڈنٹ وی سی شرما اور بنک کے شراکت داروں کی ایک بڑی تعداد نے حصہ لیا ۔ شراکت داروں کی جانب سے ابھارے گئے معاملات کے جواب میں پرنسپل سیکرٹری نے یقین دلایا کہ اگلے چار ماہ کے اندر بنک کے تمام برانچوں کی آٹو میشن کے علاوہ بنک کے کاروبار کو فروغ دینے اور بنک کے اثاثوں کا مناسب استعمال یقینی بنایا جائے گا ۔ میٹنگ میں کئی منصوبوں کو منظوری دی گئی ۔ میٹنگ میں بنک کے کیپٹل کو پانچ کروڑ روپے سے بڑھا کر 200 کروڑ روپے کرنے اور نبارڈ کے رہنما خطوط کے مطابق چارٹڈ اکاؤٹینٹ کی تقرری کو منظوری دی گئی ۔ بنک نے 288 کواپریٹو سوسائیٹیوں کی رجسٹریشن کی ہے جن میںسے تقریباً 80 ناکام ہوئی ہیں جس کی وجہ سے بنک کو کافی نقصان ہوا ہے ۔ اس سے قبل میٹنگ کی شرکاء کے مطالبات کے ردِ عمل میں پرنسپل سیکرٹری نے انہیں یقین دلایا کہ اُن کی تمام جائیز مانگوں پر مناسب غور کیا جائے گا ۔