تازہ ترین

مہنگائی کا جن بوتل سے باہر

سبزیوں، پھلوں اور اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں ہوشربأ اضافہ

9 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر//موسم میں بہتری کے باوجود وادی کا زمینی رابطہ جمعہ کو تیسرے روز بھی منقطع رہااور سرینگر جموںشاہراہ کے مسلسل بند رہنے کی وجہ سے شہر کے بازاروں میںگو شت، انڈے پھل اورتازہ سبزیوں کے بھائو تائو کھانے لگے ہیں جبکہ ناجائز منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزوں نے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں ہوشربا حد تک اضافہ کیا ہے۔شہر سرینگر میں اکثر صارف سبزیوں، پھلوں اور ضرورت کی دیگر چیزوں کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے کی شکایت کررہے ہیں۔ شاہراہ بند ہو تے ہی شہر سرینگر میں گو شت، پھل اورتازہ سبزیاںنایا ب ہوئی ہیں اور یہ چیزیں مشکلاً ہی ملتی ہیں اور جہاں یہ چیز یں دستیا ب ہیں وہاں دکانداروں نے محکمہ امور صارفین و عوامی تقسیم کاری کے نرخ ناموں کو بالائے طاق رکھ کر از خود تمام اشیائے ضروریہ کے دام مقرر کر لئے ہیں۔ایسا لگ رہاہے کہ شاہراہ بند ہوتے ہی مہنگائی کا جن بوتل سے باہر آیا اور عام شہریوں کو اضافی داموں سبزیاں اور دیگر ضروریات فروخت کرکے انکو دو دو ہاتھوں سے لوٹا جا رہا ہے۔عوامی حلقوںنے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ شہر سرینگرمیں دکانداروں نے گذ شتہ کئی روز سے سبزیوں کے نرخوں میں ہوشربا اضافہ کر دیا ،سبزی فروش کیلئے اگرچہ امور صارفین و عوامی تقسیم کاری کے محکمے نے قیمتیں مقرر کر لی ہیں لیکن حکومت کی طرف مشتہر شدہ سبزیوں کے ریٹ لسٹ خاطر میں نہیں لائے جاتے ہیںجس کی وجہ سے عوامی حلقوں میں زبردست تشویش لاحق ہو رہی ہے ۔ ضروری غذائی اجناس میں اضافے کے ساتھ ساتھ سبزی اور میوہ فروشوں نے لوٹ مچا کر رکھ دی ہے اور من مانی قیمتوں پر سبزی کو فروخت کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔لوگوں نے بتایا کہ پہلے تو سرینگر جموں شاہراہ ہفتوںبند ہوا کرتی تھی لیکن غذائی اجناس اور دیگر ضروریات زندگی کا اسٹاک اتنی جلد بازاروں سے نایاب نہیں ہوا کرتا تھا لیکن اب تو ایسا لگ رہا ہے کہ ہم یکسر اسی شاہراہ کے سہارے چھوڑ دئے گئے ہیں۔(سی این ایس)