تازہ ترین

لداخ صوبے کیلئے ہیڈ کوارٹر کا قضیہ، کرگل میں ایجی ٹیشن شروع

سینکڑوں لوگوں کا احتجاجی مارچ،ڈی سی کو میمورنڈم پیش

11 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نور الاسلام ضیاء
جموں//لداخ خطے کو صوبہ قرار دئے جانے کے بعد اعلی انتظامی ڈھانچہ لیہہ میں قائم کرنے کا معاملہ کرگل کے عوام نے مسترد کرتے ہوئے ایجی ٹیشن کی راہ اپنالی ہے ۔اتوار کو کرگل میں دوبااثر دینی جماعتوں اسلامک سکول اور خمینی میموریل ٹرسٹ کے بینر تلے نکالے گئے ایک احتجاجی جلوس میں کثیر آبادی نے شرکت کی اور صوبائی کمشنر اور آئی جی پی پیڈ کوارٹر کو باری باری بنیادوں پر دونوں اضلاع میں قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔یہ احتجاجی جلوس پر امن پور ڈپٹی کمشنر کرگل کو میمورنڈم پیش کرنے کے بعد اختتام پذیر ہوا۔کرگل کے عوام کا مطالبہ ہے کہ صوبائی کمشنر اور آئی جی پی کے ہیڈ کوارٹر گرمیوں میں کرگل اور سردیوں کے دوران لیہہ میں قائم کئے جائیں تاکہ دونوں اضلاع کے عوام صوبائی درجے کیلئے قائم کئے جارہے بنیادی ڈھانچے سے مستفید ہوں۔ذرائع کے مطابق احتجاجی جلوس میں سیاسی،مذہبی ،اور سماجی نمائندوں نے شرکت کی جو اسلامیہ سکول چوک سے صبح10-30بجے سے شروع ہوکر4گھنٹوں تک قصبے کی مختلف گلیوں سے گذر کر بارو میں اختتام پذیر ہوا۔احتجاجی مظاہرین کا گورنر سے مطالبہ تھا کہ وہ لداخ صوبے کیلئے ہیڈ کوارٹر لیہہ اور کرگل میں باری باری قائم کریں تاکہ دونوں اضلاع کے عوام مساوی طور مستفید ہوں ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ کرگل کے عوام اس مطالبے کو لے کر متحد ہیں اور ضرورت پڑنے پر ایجی ٹیشن کی راہ اختیار کرنے پر آمادہ ہیں