میرواعظ کی بیرون کشمیر طلبی خطرناک منصوبوں کی طرف اشارہ :حریت ع

بھارتی میڈیا چینلوں پرجھوٹ پر مبنی خود ساختہ رپورٹ نشر کرنے کا الزام

15 مارچ 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک
سرینگر//حریت (ع) نے بعض جانبدار بھارتی میڈیا چینلوں کی جانب سے جھوٹ پر مبنی خود ساختہ رپوٹوں کو نشر کرکے میرواعظ عمر فاروق کے بارے میں گمراہ کن خبریں پھیلانے کی کارروائیوں کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ این آئی اے کی جانب سے میرواعظ کی رہائش گاہ پر چھاپہ کے بعد مذکورہ میڈیا چینل حقائق کو مسخ کرکے پیش کرنے کی ذریعے ایک پروپگنڈے کے تحت بھارتی عوام کو میرواعظ کے بارے میں غیر جانبدارانہ رائے قائم کرنے کے حق کو متاثر کر رہے ہیں۔حریت ترجمان نے کہا کہ جس Hi Tech سسٹم کو ’’برآمد‘‘ کی بات کو اچھالا جا رہا ہے وہ درحقیت ایک عام اور جائز انٹرنیٹ کنکشن (کلاس بی لیزلائن) ہے جو ریگل چوک سرینگر میں ایک پرائیوٹ کمپنی کے پاس دستیاب ہے۔ ترجمان نے کہا کہ صحن میں ٹاور کھڑا کرنا پرائیوٹ کمپنی کے کہنے پر کیا گیا تاکہ میرواعظ کی رہائش گاہ اور ریگل چوک کے درمیان کے فاصلے میں انٹرنیٹ میں کوئی خلل نہ ہو۔ انہوں نے کہا میرواعظ کی رہائش گاہ میں تعینات پولیس اہلکاروںکی جانب سے بھی ٹاور کو علاقہ کی نگرانی کے لئے کیمرہ PTZ کے ذریعے استعمال میں لایا جارہا تھااوراس بات کا علم برسوں سے رہائش گاہ میں تعینات پولیس کو تھا اور اب یہ پروپگنڈہ کرنا کہ ـ’’دوسرے ملک کی Hotline کو برآمد کیا گیا ‘‘حماقت آمیز اور مضحکہ خیز ہے۔ترجمان نے مزید کہا کہ چھاپہ اور میرواعظ کو پریس کانفرنس کرنے سے روکنے کے بعد میرواعظ نے پریس کے نام جاری بیان میں واضح کیا تھا کہ جو چیزیںبشمول ذاتی دفتر کے ریکارڈ جس میں انجمن اوقاف جامع مسجد کے ضروری فائلیں، حریت کے پریس بیانات، وغیرہ ضبط کئے گئے باوجود مطالبہ کوئی رسید بھی فرا ہم نہیںکی گئی۔ ضبط کردہ اشیاء کے تعلق سے این آئی اے کی جانب سے رسید نہ دینا ان اشیاء کے ساتھ چھڑچھاڑ کے خدشات کو جنم دیتے ہیں۔ترجمان نے کہاکہ ہم اس بات سے بخوبی واقف ہیںکہ یہ سب کارروائیاں ہراساں کرنے کیلئے عمل میں لائی جارہی ہیں اس کے باوجود میرواعظ نے این آئی اے کواس معاملے کی نسبت سرینگر میں تعاون پیش کرنے کے واضح اشارے دئیے ہیں۔ اس کے برعکس پروپگنڈہ مہم کو چلانا اور میرواعظ کی بیرون کشمیر طلبی کی آڑ میں اُن کی جان کو خطرے میں ڈالنا صاف طور پر کچھ خطرناک منصوبوں کی طرف اشارہ کر رہا ہے۔
 

تازہ ترین