اندراآواس یوجنا | شتکڑی سونہ مرگ کا غریب کنبہ 8بر س سے امداد کامنتظر

16 مئی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

غلام نبی رینہ
کنگن//اندراآواس یوجناکے تحت مکان کی تعمیرکیلئے امداد کے انتظار میں شتکڑی سونہ مرگ کاآٹھ افراد پر مشتمل کنبہ بوسیدہ مکان میں زندگی گزار نے پر مجبور ہے۔وسطی ضلع گاندربل کے شتکڑی سونہ مرگ میں غلام محمد میر نامی شخص ایک غریب خاندان سے تعلق رکھتا ہے ۔ان کے گھر میں بزرگ باپ کے علاوہ آٹھ افراد ہیں جو ایک بوسیدہ کچے مکان میں گزر بسر کرتے ہیں۔ غلام محمد میر نے ’کشمیر عظمیٰ‘ کو بتایا کہ اُن کا ایک منزلہ رہائشی مکان پوری طرح خستہ ہوچکا ہے ۔انہو ں نے کہا کہ انہوں نے آٹھ سال قبل مرکزی معاونت والی سکیم آئی اے وائی کے تحت رہائشی مکان تعمیر کرنے کے لئے ڈپٹی کمشنر گاندربل کے دفتر میں ایک درخواست دی تھی کہ انہیں اس سکیم کے تحت رہائشی مکان تعمیر کرنے کے لئے امداد دی جائے۔ غلام محمد میر کے مطابق ڈی سی آفس سے اس کیس کو بلاک ڈیولپمنٹ افسر کے دفتر گنڈ کنگن  روانہ کیا گیا اور گزشتہ آٹھ برس سے مذکورہ شخص بلاک ڈیولپمنٹ آفس کے چکر کاٹ رہا ہے۔ غلام محمد نے کہا کہ گزشتہ آٹھ برس سے اُسے صرف یہ کہا جارہا ہے کہ فہرست میں آپ کا نام ہے۔ غلام محمد میر نے بتایا کہ رہائشی مکان اتنا بوسیدہ ہوچکا ہے کہ تیز ہواؤں اور شدید بارشوں کے روز وہ اپنے بزرگ باپ اور دیگر اہلخانہ کو لیکر دوسروں کے گھروں میں پنا ہ لینے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔ غلام محمد میر نے یہ بھی کہا کہ ان کے گھر میں پندرہ برس سے ایک آنگن واڑی سینٹر چل رہاہے اور وہ دوپہر کا کھاناسینٹر میں آنے والے بچوں کو دوسرے کے گھر میں کھلانے کے لئے بھی مجبور ہوجاتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان کا رہائشی مکان بوسیدہ ہونے کی وجہ سے کبھی بھی گر سکتا ہے ۔انہوں نے ڈی سی گاندربل ڈائریکٹر محکمہ دیہی ترقی اور بی ڈی او گنڈ سے اپیل کی کہ انہیں آئی اے وائی کے تحت رہائشی مکان تعمیر کرنے کے لئے امدادی رقم واگزار کی جائے تاکہ وہ زندگی گزر بسر کر سکیں۔
 

تازہ ترین