تازہ ترین

ممتا بنرجی نے کی استعفیٰ کی پیشکش

پارٹی کی خراب کارکردگی سے وزیر اعلیٰ مایوس

25 مئی 2019 (14 : 10 PM)   
(      )

 کلکتہ//مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ اورترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) سربراہ ممتا بنرجی نے استعفیٰ کی پیشکش کرکے ہنگامہ مچا دیا ہے۔ لوک سبھا الیکشن کے آئے نتائج میں خراب کارکردگی کے بعد ہفتہ کو بلائی گئی پارٹی کی میٹنگ میں ممتا بنرجی نے اپنے استعفیٰ کی پیشکش کر کے سب کوحیران کردیا۔انہوں نیکہا کہ اب میں ریاست کی وزیراعلیٰ نہیں رہنا چاہتی ہوں۔ انہوں نے کہا کہ وہ پارٹی کی سربراہ بنی رہیں گی، لیکن اب وزیراعلیٰ نہیں رہنا چاہتیں۔ اس بیان کے بعد ترنمول کانگریس کے سبھی لیڈروں نے اس سے نااتفاقی ظاہرکی۔ حالانکہ بعد میں ممتا بنرجی نے کہا کہ پارٹی چاہتی ہے کہ وہ وزیراعلیٰ بنی رہیں، اس لئے وہ اس عہدے پرابھی برقرار رہیں گی۔ممتا بنرجی نیکہا کہ سینٹرل فورسیز نے ہمیشہ ہمارے خلاف کام کیا ہے۔ ریاست میں ایمرجنسی جیسے حالات بنا دیئیگئے۔ممتا بنرجی نے کہا کہ سینٹرل فورسز نے ہمیشہ ہمارے خلاف کام کیا ہے۔ ریاست میں ایمرجنسی جیسی حالت بنائی گئی۔ فرقہ وارانہ بھید بھاو کو بڑھایا گیا۔ ایسا کرکے ووٹوں کی تقسیم کی گئی، ہم نے الیکشن کمیشن سے بھی اس بات کی شکایت کی، لیکن کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ واضح رہے کہ ترنمول کانگریس کی سربراہ نے لوک سبھا الیکشن میں پارٹی کی خراب کارکردگی کو لے کراپنی رہائش گاہ پرپارٹی کے سینئرلیڈروں کی میٹنگ بلائی تھی۔ اس دوران پارٹی کی ریاست میں گرتی شبیہ پرتبادلہ خیال کیا گیا اوراسی دوران ممتا بنرجی نے یہ سبھی باتیں کہیں۔قابل ذکرہے کہ ترنمول کانگریس کو اس لوک سبھا الیکشن میں 42 میں سے 22 سیٹیں ہی ملیں۔ وہیں 2014 کی طرف نظرڈالی جائے تو پارٹی کو 34 سیٹیں ملی تھیں۔ وہیں بی جے پی کی کارکردگی ان لوک سبھا الیکشن میں تاریخی رہی۔ پارٹی کو 18 سیٹیں ملیں جبکہ 2014 میں بی جے پی کو صرف دو ہی سیٹ ملی تھیں۔ممتا بنرجی نے ای وی ایم کو لے کربھی سوال اٹھائے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے جتنی سیٹیں طے کی تھیں، اتنی آئیں۔ انہوں نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ بی جے پی نے 300 سیٹ کہا تھا اوروہ 300 سیٹ جیتے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ مغربی بنگال میں 23 سیٹ کہا تھا، پتہ نہیں کیسے 23 نہیں آئی۔