تازہ ترین

مہاراشٹر کانگریس صدراشوک چوان مستعفی!

اقلیتی فرقے سے دوری کے سبب پارٹی کا یہ حال ہوا

25 مئی 2019 (14 : 10 PM)   
(      )

ممبئی//لوک سبھا انتخابات میں کانگریس پارٹی کی شکست فاش کے بعد استعفوںکا دورشروع ہوچکا ہے اور مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی (ایم پی سی سی ) کے صدراور سابق وزیراعلیٰ اشوک چوان نے بھی استعفیٰ دینے کا من بنالیا ہے ،جبکہ ذرائع کے مطابق انہوںنے اپنے عہدہ سے استعفیٰ دے دیا اور کہا کہ ریاست اور ملک بھر میں جہاں جہاں کانگریس کو ہارکا سامنا کرنا پڑا ہے ،وہاں کے عہدیداران استعفیٰ دے دیں ۔واضح رہے کہ مہاراشٹر میں کانگریس نے چندرپور سے ایک نشست پر کامیابی حاصل کی ہے جبکہ اس کی حلیف این سی پی کو چار نشستیں حاصل ہوئی ہیں ،آئندہ چھ مہینے میں مہاراشٹراسمبلی کے انتخابات ہیں اور دونوں میں انتخابی سمجھوتہ کے بارے میں چہ مہ گوئیاں شروع ہوچکی ہیں ،ویسے امکان ہے کہ دونوں میں سمجھوتہ ہوجائے اور یہی ان کے لیے بہتر ہوگا۔خوداشوک چوان کو شکست کامنہ دیکھنا پڑا جبکہ سشیل کمار شندے سمیت کئی اہم لیڈرہار گئے ہیں۔چوان کو بی جے پی کے امیدوار نے چالیس ہزار سے زائد ووٹوں سے شکست دی ہے ،اور ریاست میں شکست کی ذمہ داری لیتے ہوئے انہوںنے استعفی ٰ دینے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔کانگریس کے مہاراشٹر میں شکست کے کئی اسباب ہیں اور ایک پرکاش امبیڈکر کی ونچت بہوجن اگاڑی کے میدان میں اترنا ہے جوکہ ہر جگہ اس کے امیدوار دوسرے اور تیسرے مقام پر رہے اور کانگریسیوںکو تیسرے اور چوتھے مقام پر پہنچا دیا ہے ۔سیاسی مبصرین کا کہنا ہے کہ کانگریس کی اس حالت کے لیے پارٹی قیادت خود ذمہ دارہے ،عین انتخابات کے وقت تقریری اور برخاستی کے فیصلے بھاری پڑے ہیں،ممبئی میں سابق ایم پی اور حریف پارٹیوں کی متنازع پالیسیوںپر منہ توڑ جواب دینے والے سنجے نروپم کو ایم آرسی سی کے عہدہ سے ہٹا کر ملند دیورا کو تخت نشین کردیا گیا ،نتیجہ عہدیداروںاور ورکروں میں بے چینی پیدا ہوگئی ۔مبصرین کا کہنا ہے کہ ممبئی ،مہاراشٹر،اترپردیش ہی نہیں بلکہ ملک بھر میں ورکروںکے فقدان اور سرگرمیوں سے دوری کی عام شکایتیں موصول ہوئی ہیں۔کرناٹک میں روشن بیگ نے بغاوت کا پرچم بلند کردیا ہے ،دراصل ان کا شکایت بجا ہے کہ کانگریس پارٹی میں ایک طبقہ اقلیتوں اور خصوصاً مسلمانوں کو اچھی نظرسے نہیں دیکھتا ہے اور یہ لعنت کانگریس میں دوتین دہائیوں سے داخل ہوگئی ہے ،اورنگ آباد (مہاراشٹر) ایک مسلم اکثریتی شہر منا جاتا ہے ،لیکن کانگریس نے کبھی یہاں سے کسی مسلم امیدوارکو موقعہ دینے کی ہمت نہیں کی ،اورنگ آباد سے آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم ) کے مقامی ایم ایل اے باشعور،قابل اور باصلاحیت ،تعلیم یافتہ اور سابق صحافی امتیازسیّد جلیل نے کامیابی حاصل کرلی ہے ۔یو این آئی