تازہ ترین

جماعت اسلامی پر پابندی کا معاملہ

ٹریبونل آج جموں میں سماعت کریگا

13 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

یوگیش سگوترہ
جموں //جماعت اسلامی پر پابندی عائد کئے جانے کے فیصلے کا جائزہ لینے کیلئے مرکز کی طرف سے تشکیل دیاگیا ٹریبونل (ان لا فل ایکٹیویٹیز پریونشن ٹریبونل ) جموں میں آج جبکہ لیہہ میں 20 اور 22 جولائی کو سماعت کرے گا ۔اس ٹریبونل کی سربراہی دہلی ہائی کورٹ کے جج جسٹس چندر شیکھر کررہے ہیں ۔سرکاری ذرائع کے مطابق جسٹس چندر شیکھر کی قیادت میں 16رکنی ٹیم وزارت داخلہ اور سرکاری کونسل ارکان کے ہمراہ جموں پہنچ گئی ہے جو جموں ہائی کورٹ کے احاطے میں اس تعلق سے سنوائی کرے گی کہ کیا جماعت اسلامی کو غیر قانونی تنظیم قرار دینے کیلئے شواہدکافی ہیں یا نہیں ۔ٹریبونل کی طرف سے ایسی ہی سنوائی بیس اور بائیس جولائی کو لیہہ میں بھی ہوگی۔علیحدہ علیحدہ مراسلوں کے ذریعہ وزارت داخلہ کی طرف سے ریاستی چیف سیکریٹری اور صوبائی کمشنر جموں سے کہاگیاہے کہ ٹریبونل کیلئے کورٹ روم میں بیٹھنے کا انتظام رکھاجائے ۔ریاستی انتظامیہ کو یہ ہدایت بھی دی گئی ہے کہ اس حوالے سے لوگوں کو بڑے پیمانے پر مطلع کیاجائے تاکہ تمام طبقوں سے تعلق رکھنے والے افراد تجاویز یا شواہد ٹریبونل کے سامنے پیش کرسکیں ۔ذرائع کاکہناہے کہ ٹریبونل کی تشکیل اس غرض سے دی گئی ہے تاکہ یہ دیکھاجاسکے کہ جماعت اسلامی کو ایک غیر قانونی تنظیم قرار دینے کافیصلہ مناسب ہے یا نہیں ۔ذرائع نے بتایاکہ ٹریبونل 10بج کر30منٹ پر سنوائی شروع کرے گاجس دوران خواہش مند افراد شواہد کے حلف نامہ اس کے سامنے پیش کرسکتے ہیں ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ مرکزی وزارت داخلہ نے رواں برس فروری کے مہینے میں جماعت اسلامی کو بین کردیاتھا اوراس پر ریاست جموں وکشمیر میں ملی ٹینسی اور انتہا پسندی کو مدد دینے کا الزام لگاتھا۔