تازہ ترین

بنیادی سہولیات کا فقدان | کیرن کے لوگوں کا پریس کالونی میں دھرنا

23 جولائی 2019 (00 : 12 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر //سرحدی قصبہ کیرن کے لوگوں نے سوموار کو بنیادی سہولیات کی عدم دستیابی کے خلاف سرینگرآکر پریس کالونی میں احتجاج کیا۔ سرینگر سے 170کلو میٹر کی دوری پر آباد گائوں کیرن کے لوگوں نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر بنیادی سہولیات فراہم کرنے کے حق میں نعرے درج تھے ۔احتجاج کے دوران نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کیرن کے لوگوں نے بتایا کہ علاقے کے لوگ آج کے اس جدید دور میں بھی موصلاتی نظام سے محروم ہیں اور لوگوں کو ہزاروں روپے خرچ کر کے فون کی ایک کال کرنے کیلئے بھی 60کلو میٹر دور کپوارہ آنا پڑتا ہے۔احتجاجیوں کا کہنا تھا کہ کیرن کپوارہ سڑک بھی کھنڈرات کا منظر پیش کر رہی ہے ۔سرپنچ محمد سعید نے بتایا کہ کیرن4پنچایتی حلقوں پر مشتمل ہے اور اس چھوٹے سے علاقے میں زندگی کی ہر ایک سہولیات کیلئے لوگ ترس رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ پی ڈی ڈی نے اگرچہ یہ دعویٰ کیا تھا کہ دسمبر 2018میں اس علاقے کو بجلی سہولیات فراہم کی جائے گی لیکن ابھی بھی اندھیرا ہے۔انہوں نے کہا کہ سکولوں میں عملے کی کمی کے سبب کیرن کے طلاب کا مستقبل تباہ ہو رہا ہے جبکہ کیرن ہسپتال میں بھی کوئی ماہر ڈاکٹر موجود نہیں ۔احتجاج کے دوران لوگوں نے بتایا کہ کیرن کے لوگوں نے سڑک کی مرمت کے حوالے سے اگرچہ کئی مرتبہ احتجاجی مظاہرے بھی کئے مگر محکمہ آر اینڈ بی سڑک کی مرمت کی جانب کوئی دھیان نہیں دیتے اور نتیجے کے طور پر مقامی آبادی اس خستہ حال سڑک پر جانوں کو جوکھم میں ڈال کر سفر کرنے پر مجبور ہیں۔