تازہ ترین

یاتری اور سیاح کشمیر چھوڑ کر چلے جائیں

اب باضابطہ طور پر سرکاری ایڈوائزری جاری

3 اگست 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

اظہر رفیقی+اشفاق سعید +یوگیش سگوترہ

   یاتریوں میں خوف کی لہر،وادی میں بے چینی کی کیفیت ،اے ٹی ایمزاور پٹرول پمپوں پر قطاریں لگ گئیں

 
  سرینگر //حکومت نے امرناتھ یاتریوں اور سیاحو ں کیلئے سیکورٹی ایڈوائزری جاری کرتے ہوئے اُن سے کہا ہے کہ وہ وادی میں اپنا قیام مختصر کرکے جتنا جلد ممکن ہوسکے کشمیر چھوڑکر چلے جائیں۔پرنسپل سیکرٹری داخلہ شالین کابرا کی طرف سے جاری ایک حکمنامے میں کہا گیا ہے کہ امرناتھ یاترا کو نشانہ بنانے سے متعلق انٹلی جنس رپورٹیں موصول ہوئی ہیں۔چنانچہ ،وادی میں موجودہ سلامتی صورتحال اور سیاحوں و امرناتھ یاتریوں کی سلامتی کو مد نظر رکھتے ہوئے یاتریوں اور سیاحوں کو ہدایات دی جاتی ہیں کہ وہ وادی میں اپنا قیام مختصر کریں اور جلد از جلد واپس لوٹنے کے اقدامات کریں۔اس سے قبل مرکزی وزارت داخلہ نے قریب ایک ہفتہ قبل سی آر پی ایف، بی ایس ایف،آئی ٹی بی پی، ایس ایس بی اور دیگر نیم فوجی دستوں کی 100کمپنیاں فوری طور وادی بھیجنے کے احکامات صادر کئے تھے۔10ہزار نیم فوجی دستوں کے اہلکاروں کو وادی بھیجنے کے احکامات کے ساتھ ہی ایک روز قبل مزید 25 ہزار نیم فوجی اہلکاروں کو جمعرات سے وادی بھیجنے کا آغاز کیا گیا۔سیکورٹی فورسز کی اتنی بڑی تعداد کے قیام کیلئے جہاں کہیں بھی کوئی سرکاری عمارت خالی تھی ، یا جو زیر تعمیر تھی ، یا پھر مکمل ہونے کے قریب تھی، میں فورسز کو ٹھہرایا جارہا ہے۔ریاستی حکومت نے مرکزی وزارت داخلہ احکامات کے فوراً بعد جموں میں تعینات آرمڈ پولیس کے اعلیٰ حکام کو وائر لیس پیغام کے ذریعہ اس بات کی جانکاری دی کہ وہ آرمڈ پولیس کی 100کمپنیاں تیاری کی حالت میںرکھیں نیز تشدد آمیز مظاہروں کو روکنے کیلئے درکار سامان کے بارے میں بھی اعلیٰ حکام کو مطلع کیا جائے۔ان احکامات کے بعد ریلوے حکام نے اپنے ملازمین کو چاہ ماہ کا راشن ذخیرہ کرنے اور اپنے اہل خانہ کو فوری  طور پر وادی سے باہر لیجانے کا حکم دیا۔اسکے دو روز بعد سرینگر پولیس نے ایک اور حکم نامہ جاری کردیا، جس میں تمام پولیس سٹیشنوں اور پولیس ڈویژنوں اور پولیس پوسٹوں کے انچارج افسران کو ہدایات دیں گئیں کہ وہ شہر کی تمام مساجد، انکے امام صاحبان اور منتظمین کے بارے میں بھی  فہرست مرتب کر کے روانہ کریں۔ادھر محکمہ داخلہ کی طرف سے امرناتھ یاتریوں اور سیاحوں کو سیکورٹی وجوہات کی بنا پر کشمیر سے واپسی کی راہ اختیار کرنے کے حکم کے بعد وادی میں پہلے سے پائی جا رہی بے چینی میں زبردست اضافہ ہوا اور لوگوں نے اپنی ضرورت کا سامان جمع کرنا شروع کر دیا ۔فوری طور پر لوگوں نے بازاروں کا رخ کر کے کھانے پینے کی اشیاء خریدنا شروع کیں اور ہر طرف افرا تفری کا ماحول پیدا ہوا۔جہاں کہیں بھی اے ٹی ایمز  ہیں،وہاں لوگوں کی بھاری بھیڑ جمع ہوناشروع ہوئی اور شہریوں کی قطاریں لگ گئیں۔حکم نامے کے بعد شہر اور وادی کے دیگر علاقوں میں واقع پٹرول پمپوں پر گاڑیوں کی بھی لمبی قطاریںدیکھی گئیںاورہر ایک گاڑ یوں میں تیل بھرنے کی دوڑ لگ گئی۔’’ہر کسی کی زبان پر صرف ایک بات تھی کہ ریاست میں کچھ ہونے والا ہے‘‘ ۔افواہیں اور چہ میگوئیاں کے بیچ کہیں کوئی چاول تو کہیں آٹا  دالیں، پیاز، آلووچینی خریدنے میں مصروف نظر آیا ۔ہر طرف افواہوں کا بازار بھی گرم رہا۔ادھرریاستی حکومت کی طرف سے ایڈوائزری جاری ہونے کے بعد بھگوتی نگر یاتری نواس جموں میں یاترا کیلئے اپنی باری کا انتظار کررہے یاتریوں میں خوف کی لہر پیداہوئی ہے ۔یاتریوں کاکہناہے کہ یاترا کو پندرہ اگست تک شیڈول کے مطابق جاری رکھاجائے ۔یاتریوں کاکہناہے کہ حکومت مزید فورسز تعینات کرکے یاترا کو پندرہ اگست تک جاری رکھے تاکہ ملک بھر سے آئے یاتری درشن کرسکیں ۔جے پور راجھستان کے اشوک سانی کاکہناتھا’’میرا تعلق راجھستان سے ہے اور ہم نے پارلیمانی چنائو میں سبھی 25نشستیں مودی (نریندر مودی )کو دیں لیکن ان دنوں کیلئے نہیں ،ہمیں توقع تھی کہ مودی حکومت مضبوط ہے لیکن یاتریوں اور سیاحوں کو کشمیر سے واپس آنے کی ایڈوائزری امن دشمن عناصر کے سامنے سرینڈر ہے ‘‘۔
 
 

سکولوں میں کوئی چھٹی نہیں

نیوز ڈیسک
 
 سرینگر //سکولوں کو بند رکھنے کی خبر کو بے بنیاد اور محض ایک افواہ قرار دیتے ہوئے ڈویژنل کمشنر کشمیر بصیر احمد خان نے کہا کہ سرکار کی جانب سے کوئی بھی ایسا حکم نامہ جاری نہیں کیا گیا ہے ۔ سوشل میڈیا پر سکولوں کو 10دن تک بند رکھنے کی خبر کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایسا کوئی بھی آڈر انتظامیہ کی جانب سے جاری نہیں کیا گیا ہے ۔ڈویژنل کمشنر نے کہا کہ لوگوں کو افواہوں پر کان دھرنے سے پریز کرنا چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ لوگوں کو ڈویژنل کمشنر یا پھر ڈی سی سرینگر سے اس حوالے سے پہلے رابطہ قائم کرنا چاہئے ۔ 

 

 

جموں میں بھی ہائی الرٹ جاری 

ہوائی اڈے اور فوجی تنصیبات تیاری کی حالت میں

یوگیش سگوترہ 
 
جموں // جموں میں ہائی الرٹ جاری کیاگیاہے اور ہوائی اڈوں و فوجی تنصیبات کو تیار رکھاگیاہے ۔ذرائع نے کشمیرعظمیٰ کو بتایاکہ جموں میں ہوائی اڈوں اور فوجی تنصیبات کو بالکل تیار رکھاگیاہے جبکہ حساس اور سرحدی علاقوں میں فوج کی اضافی نفری بھی تعینات کردی گئی ہے ۔ صبح سے ہی ہوائی اڈے کے اوپر سے ڈرون طیارے گردش کرتے رہے ۔ فورسز کی مزید کئی بٹالین حساس علاقوں کشتواڑ، بھدرواہ ، ڈوڈہ ، بانہال اور رام بن میں تعینات کی گئی ہیں جبکہ حد متارکہ اور بین الاقوامی سرحد پر بھی فوجی کمک میں اضافہ کیاگیاہے ۔ راشٹریہ رائفل کی رومیو ، ڈیلٹا اور یونیفارم فورسزاور آرمی کے دیگر ریگولر یونٹوں کو حد متارکہ اور اندرونی علاقوں میں مستعد رہنے کا کہاگیاہے تاکہ کسی بھی طرح کے حالات کاسامنا کیاجاسکے ۔ذرائع نے بتایاکہ پچھلے کچھ دنوں سے جموں کے مختلف علاقوں میں نئی کمپنیاں تعینا ت ہوئی ہیں اور ان میں سے بیشتر کمپنیوں کو حساس علاقوں میں تعینات کیاگیاہے جہاں وہ گشت کررہی ہیں ۔
 
 

بھاجپا اراکین کیلئے وہپ جاری

پارلیمنٹ میں حاضر رہنے کی ہدایت

نئی دلی//میڈیا رپورٹوں کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی نے سبھی لوک اور راجیہ سبھا اراکین کے نام وہپ جاری کرتے ہوئے انہیں ہدایت کی ہے کہ وہ 5سے 7اگست تک لوک سبھا میں موجود رہیں۔