تازہ ترین

۔20ہزار سیاحوں کی واپسی ،معیشت کی تباہی کا اعلان:چیمبر آف کامرس

4 اگست 2019 (00 : 12 AM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر// حکومت پروادی میں’’ آپریشن افراتفری‘‘ شروع کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریزنے کہا ہے کہ سرکاری احکامات سے ریاست کی معیشت کو نا قابل تلافی زک پہنچنے کا خدشہ ہے۔چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے صدر شیخ عاشق حسین نے پریس کانفرنس میں کہا ’’ فورسز کی نقل و حرکت سے متعلق خفیہ معلومات کو دانستہ طور پر منکشف کرنا،سرکاری میٹنگوں میں مباحثوں اور حکم نامہ کی تفصیلات،عوامی سطح پر افراتفری ہونے والے حکم ناموں کی اجرائی کے علاوہ افواہوں اور پرپگنڈاکے نتائج میں ریاست میں غیر یقینی بحران پیدا ہوگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پرنسپل سیکریٹری محکمہ داخلہ کی طرف سے جاری حکم نامہ سے ماحول میں میز کشیدگی پیدا ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جامع آپریشن کرکے ایس آر ٹی سی گاڑیاں اور دیگر سرکاری گاڑیوں کو سیاحی مقامات پر یاتریوں اور سیاحوں کو واپس لانے کیلئے استعمال میں لایا گیا۔شیخ عاشق نے کہا کہ35ہزار اضافی فورسز کی تعیناتی،فضایہ کو ہائی الرٹ کرنے،این آئی ٹی اور دیگر تعلیمی ادارو ں سے طلاب کو منتقل کرنے،عام شہریوں و سیاست 
دانوں کی آزادانہ نقل و حرکت پر قدغن کی رپورٹوں نے کشمیر میں افراتفری کا ماحول پیدا کیا ہے۔شیخ عاشق نے کہا  اس کے نتیجے میں سیاحتی اور دیگر شعبوں کو کافی نقصانات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکم نامہ کی وجہ سے سرکارکی ان کاوشوں پر بھی پانی پھیر گیا،جو گزشتہ ایک برس کے دوران وادی میں سیاحوں کو آنے کیلئے راغب کرنے کیلئے  کی گئی تھیں۔