تازہ ترین

جموں وکشمیر بنک میں غیر قانونی بھرتیاں | انٹی کرپشن بیورو کی محبوبہ کے نام نوٹس

حکومت مین اسٹریم سیاسی لیڈروں کو ڈرا نہیں سکتی ـ : پی ڈی پی صدر

5 اگست 2019 (00 : 12 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر //انٹی کرپشن بیورو نے پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کے نام نوٹس جاری کرتے ہوئے انہیں جموں وکشمیر بنک میں بھرتی کئے گئے ملازمین میں بے ضابطگیوں کے حوالے سے وضاحت طلب کی ہے۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ اس طرح کے اقدامات سے مرکزی سرکار مین اسٹریم سیاسی لیڈران کو ڈرانا اور دھمکانا چاہتی ہے جو کوئی حیرانگی کی بات نہیں۔انٹی کرپشن بیورو کی جانب سے جاری کردہ خط زیر رنمبر SSP/ACBK/FIR-1 0/2019/3064 بتاریخ  03-08-2019 میں محبوبہ مفتی کو مخاطب ہوکر کہا  گیاہے کہ ’’کیس زیر ایف آئی آر نمبر 10/2019بتاریخ 08-06-2019 کی تحقیقات کرنے کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ جموں وکشمیر بنک میں بعض تقرریاں غیر قانونی طریقے پر عمل میں لائی گئی ہیں۔ خط میں کہا گیا ہے کہ بنک کے اُس وقت کے چیئرمین پرویز احمدنے پی ڈی پی کے بعض وزراء کی سفارشات پر کئی اُمیدواروں کو بنک میں ملازمت فراہم کی ہے۔ محبوبہ مفتی سے کہا گیا ہے کہ ’’آپ انٹی کرپشن بیورو کے سامنے اس بات کی وضاحت کریں کہ غیر قانونی طور پر عمل میں لائی گئی تقرریوں میں آپ کا کیا رول رہا ہے، کیا آپ نے جموںوکشمیر بنک میں غیر قانونی طور پر بھرتی ہوئے اُمیدواروں کی زبانی یا تحریری طور پر سفارش کی ہے‘‘۔ نوٹس جاری کئے جانے کے فوراً بعد سماجی رابطہ سائٹ ٹویٹر پر محبوبہ مفتی نے کہا کہ’’انہیں سرکار کی جانب سے اس طرح کے وضاحتی نوٹس جاری کئے جانے سے کوئی بھی حیرانگی نہیں ہوئی ہے کیوں کہ سرکار یہاں کے مین اسٹریم لیڈران کو ڈرادھمکا کر اجتماعی جدوجہدسے دور کرنے کی کوشش کررہی ہے‘‘۔ محبوبہ مفتی کا کہنا تھا کہ ’’میں ایک ادنیٰ سی ذات ہوں لیکن ایک قوم کے اجتماعی مفاد نے ہمیں آج ایک دوسرے کیساتھ متحد کیا لہٰذا سرکار کے یہ اقدامات ہمیں پیچھے نہیں ہٹاسکتی‘‘۔