تازہ ترین

’تنخواہ حسب سابق طریقے پر واگزار کی جائے‘

کپوارہ//کپوارہ اور اوڑی میں آنگن واڑی ورکرو ں اور ان کی معاونین نے پیر کو گورنر انتظامیہ کے اس فیصلہ کے خلاف زور دار احتجاجی مظاہرے کئے جس میں آنگن واڑی وکرو ں اور ان کی معاونین کو پنچایتو ں کے ماتحت کر دیا گیا ۔پیر کی صبح کو ضلع بھر سے آئی ہوئے سینکڑوں آنگن واڑی ورکروں اور ان کی معاونین (ہیلپرو)کپوارہ میں جمع ہوئے اور گورنر انتظامیہ کے خلاف زور دار احتجاجی مظاہرے کئے ۔ان کا کہنا تھا کہ حال ہی میں گور نر انتظامیہ نے آنگن واڑی وکروں اور ان کی معاونین کو پنچایتو ں کے ماتحت کرنے کاحکم جاری کیاجس پر نظر ثانی کی ضرورت ہے ۔انہو ں نے کہا کہ ایک تو ان کی تنخواہ محدود ہے اور دوسری طرف آنگن واڑی  سینٹروں کو پنچائتو ں کے حوالہ کئے جانے سے شکوک و شبہات پیدا ہوتے ہیں ۔ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ اس طرح کے حکم نامو ں سے ان کی عزت نفس بھی دائو پر لگ سکتی ہے ۔انہو ں نے گور نر انتظامیہ سے اس حکم

اہرہ بل ٹنگمرگ کولگام میں پینے کے پانی کی شدید قلت

سرینگر//اہرہ بل ٹنگمرگ کولگام میں وسیع آبادی 6ماہ سے پانی کی شدید قلت کا سامنا کررہی ہے اور عوام ندی نالوں کا مضر صحت پانی استعمال کرنے کیلئے مجبور ہے۔ مقامی لوگوں کاکہنا ہے کہ 200چولہوں پر مشتمل آرہ بل ٹنگمرگ دورِ جدید میں بھی پانی سے محروم ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ یہ علاقہ حکومت اور ضلع انتظامیہ کی نظروں سے اوجھل ہے اور مکینوں کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ نہ تو سردیوں میں اور نہ اس وقت گرمیوں میں پانی مل رہا ہے۔ مکینوں کاکہنا ہے کہ پانی کی قلت کے سبب وہ شدید مشکلات اور مصائب کا سامنا کررہے ہیں۔ ایک مقامی شہری باج الدین نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ علاقہ میں پانی کی نایابی کو لیکر لوگوںنے پی ایچ ای محکمہ سے بھی شکایت کی لیکن ان کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی۔ مذکورہ شہری نے کہاکہ خواتین کو قریب ایک کلومیٹر دور جاکر ندی اور نالوں سے پانی لانا پڑتا ہے جو کہ مضر

شہلا رشید نے آنگن واڑی ورکروں کی حمایت کی

سرینگر//جموں کشمیرپیپلزمومنٹ کی جنرل سیکریٹری شہلا رشید نے حکومت پرزوردیا ہے کہ وہ آنگن واڑی ورکروں کے مطالبات پر غور کریں جو ریاست بھر میں ریاستی انتظامی کونسل کے اُس فیصلے کیخلاف احتجاج کررہی ہیں جس کی رو سے اُن کی تنخواہ پنچایتی راج اداروں کے ذریعے واگزارکی جائے گی ۔نئے قواعد کے تحت مقامی سرپنچ یاوارڈ افسر مطمین ہوناچاہیے تب ہی ان کی تنخواہ واگزار ہوگی ۔اس سے قبل اُن کی تنخواہ چائلڈ ڈیولپمنٹ افسر کے ذریعے واگزار کی جاتی تھی ۔ آنگن واڑی ورکروں کے مطالبات کی حمایت کرتے ہوئے جموں کشمیر پیپلزمومنٹ کے صدر ڈاکٹر شاہ فیصل نے سوشل میڈیا پر حکومت پرزوردیا کہ وہ اس مسئلہ کی طرف فوری دھیان دے اور اس کا حل نکالیں ۔شہلا رشید نے مزیدکہا کہ نئے قواعد سے مشکلات پیدا ہوں گے کیونکہ ان سے خواتین جو حکومت کی ملازم ہیں ،سیاسی عہدیداروں کے ماتحت ہوں گی ،جس سے ان پر سیاسی دبائو پڑنے کااحتمال ہے اورایسے

نیشنل کانفرنس رہنمائوں نے مہلوک پولیس اہلکارکے پسماندگان کی ڈھارس بندھائی

سرینگر//نیشنل کانفرنس نے پی ایس اوریاض احمد کی ہلاکت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ایسے واقعات کی مہذب اقوام میں کوئی جگہ نہیں ہے۔ایک بیان کے مطابق نیشنل کانفرنس کے جنرل سیکریٹری علی محمدساگر اور صوبائی صدر ناصراسلم وانی نے نیوہ پلوامہ جاکر مہلوک ایس پی اوریاض احمد کے پسماندگان کی تعزیت پرسی کی اور کہا کہ پارٹی اس صدمہ عظیم میں برابر شریک ہے ۔ریاض احمد نیشنل کانفرنس رہنما سابق جسٹس توقیراحمدشاہ کے ذاتی محافظ تھے۔پارٹی لیڈران نے کہا کہ بلا وجہ کسی کو قتل کرنا انسانیت کو قتل کرنے کے مترادف ہے ۔ اس موقع پر پارٹی کے سینئر لیڈران غلام محی الدین میر، غلام نبی رتن پوری، جسٹس توقیر شاہ اور یوتھ لیڈر جاویر رحیم بھٹ بھی تھے۔   

پرائمری ہیلتھ سینٹرتارت پورہ میں طبی و نیم طبی عملہ کی کمی

کپوارہ// تارت پورہ رامحال کا پرائمری ہیلتھ سنٹر انتظامیہ کی نظرو ں سے اوجھل ہے جس کی وجہ سے علاقہ کے مریضوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ بلاک میڈیکل آفس ویلگام میں قائم پرائمری ہیلتھ سینٹر جو دو سال قبل آتشزدگی کی ایک واردات میں خاکستر ہوا  اور تب سے علاقہ رامحال کے متعدد علاقوں کے مریض پرائمری ہیلتھ سینٹر تارت پورہ میں اپنا علاج و معالجہ کرانے کے لئے آتے ہیں اور مذکورہ اسپتال پر اس وقت مریضوں کا زبردست دبائو ہے تاہم ڈاکٹر وں کی کمی کی وجہ سے اسپتال میں مریضوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگو ں نے الزام لگایا کہ جو ڈاکٹر اس وقت اسپتال میں تعینات ہیں وہ بھی اپنی ڈیوٹی کی انجام دہی میں کوتاہی برتتے ہیں جس سے آئے روز مریض دردر کی ٹھوکر یں کھانے پر مجبور ہیں ۔لوگو ں کا مزید کہنا ہے کہ مذکورہ اسپتال کو نیم طبی عملہ کے رحم و کرم پر چ

سرفراؤ گنڈ میں آگ کی واردات میں مکان تباہ

کنگن//گنڈ کنگن میںآگ کی ایک واردات میں ایک رہائشی مکان خاکستر ہوا۔تفصیلات کے مطابق تحصیل گنڈ کے سرفرائوگائوں میں اس وقت سنسنی پھیل گئی جب سید حیدرشاہ ولدبشیراحمدشاہ کے  یک منزلہ مکان میں آگ نمودار ہوئی ۔مقامی لوگوں نے فوری طور فائرسروس کو مطلع کیا اور وہ جائے واردات پر پہنچ گئے اور آگ کو مزید پھیلنے سے روکا۔پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی ہے۔   

پولیس اہلکاروں کیلئے بی ایل ایس تربیتی پروگرام

 سر ی نگر//گورنر کے مشیر کے۔ وِجے کمارنے ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کے دوران پولیس اہلکاروںکو بی ایل ایس تربیت سے ہمکنار کرانے کے لئے امور کے خدو خال پر تبادلہ خیال کیا۔اس موقعہ پر پرنسپل آر آئی ایچ ایف ڈبلیو دھوبی ون نے اس تربیتی پروگرام کی مختلف پہلوؤں کو اُجاگر کرتے ہوئے کہا کہ یہ تربیت ماہر طبی اہلکاروں کی طرف سے دی جائے گی تا کہ پولیس اہلکاروں کے ہُنر میں اضافہ کیا جاسکے۔اس موقعہ پر فیصلہ لیا گیا کہ ٹریفک، فائیر اینڈ ایمرجنسی سروسز اور دیگر ایجنسیوں کے تمام پولیس اہلکاروں کو ضلع وار بنیادوں پر بی ایل ایس تربیت دی جائے گی تا کہ بی ایس ایل ٹرینر پولیس محکمہ میں تمام اضلاع میں تیار کئے جاسکیں۔منصوبے کے مطابق محکمہ ہر ایک ضلع میںسے20 ٹرینر پولیس محکمہ سے نامزد کرے گا جنہیں ہفتہ وار تربیتی پروگرام سے روشناس کرایا جائے گا۔مشیر نے پولیس محکمہ سے کہا کہ وہ ایک سنیئر پولیس افسر کو نامزد

’نئی قومی تعلیمی پالیسی 2019‘ | سینٹرل یونیورسٹی میں تیسرایک روزہ سمینار

گاندربل //’نئی قومی تعلیمی پالیسی 2019‘ موضوع پر سینٹرل یونیورسٹی کشمیر کے تیسرے ایک روزہ سمینار میں یہاں ماہرین تعلیم نے اپنی آراء پیش کی ۔سمینار سے اپنے کلیدی خطاب میںسابق ناظم تعلیمات کشمیرمحمدرفیع نے جموں کشمیرمیں تعلیم کے شعبے کی ترقی کی تاریخ بیان کی ۔انہوں نے بھارت میں قومی تعلیمی نظام کے سنگ میلوں کی تفاصیل بھی پیش کیں اور  نصاب کے حوالے سے مجوزہ نئی تعلیمی پالیسی2019کے نقائص پرروشنی ڈالی ۔انہوں نے کہا کہ نئی ڈارفٹ پالیسی نے ریاستوں کو مخصوص تہذیبی مزاج کے مطابق نصاب ترتیب دینے کامجازبنایا ہے ۔ انچارج وائس چانسلر ،ڈائریکٹرریسرچ وڈیولپمنٹ پروفیسرعبدالغنی نے اپنے صدارتی خطبے کہاکہ نئی تعلیمی پالیسی2019 کی نظرمیں حقیقی جامع تعلیم کافقدان ہے ۔انہوں نے ملک بھر میںیکسان اورمشترکہ نصاب لاگوکرنے تحدیدبھی بیان کی۔پروفیسرغنی نے تحقیقی ماحول کوپروان چڑھانے کی ضرورت پرزور

سماجی تحفظ سے متعلق سکیموں کی عمل آوری | روہت کنسل نے پیش رفت کا جائیزہ لیا

سرینگر //منصوبہ بندی ، ترقی اور نگرانی محکمہ کے پرنسپل سیکرٹری روہت کنسل نے یہاں ڈپٹی کمشنروں کے ساتھ ایک میٹنگ کے دوران ریاست میں جاری مختلف پروگراموں اور سکیموں کی پیش رفت کا جائیزہ لیا۔ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے ڈپٹی کمشنروں نے سکیموں کی پیش رفت کے بارے میں تفصیلات دیتے ہوئے بہتر منصوبہ سازی کے لئے اپنی تجاویز دیں۔میٹنگ میں سماجی بہبود محکمہ اور آئی سی ڈی ایس کے عہدیداروں نے بھی شرکت کی۔میٹنگ میں جن پروگراموں اور پالیسیوں پر تبادلہ خیال کیا گیا اُن میں بیک ٹو ولیج، نیشنل سوشل اسسٹنٹس پروگرام، انٹی گریٹیڈ سوشل سیکورٹی سکیم اور بارڈر ایریا ڈیولپمنٹ پلان شامل ہیں۔ بیک ٹو ولیج پروگرام کی کامیابی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے روہت کنسل نے کہا کہ اس سلسلے میں سرکاری افسروں اور اہلکاروں نے محنت و لگن سے کام کیا۔ انہوں نے ڈپٹی کمشنروں سے تلقین کی کہ وہ صحیح ڈاٹا اپ لوڈ کرنے کو یقینی بنائیں۔س

غیر قانونی تجاوزات ناقابل قبول:صوبائی کمشنر

سرینگر//صوبائی کمشنر کشمیر بصیر احمد خان نے وادی کے تمام ضلع ترقیاتی کمشنروں کو غیر قانونی تجاوزات اورسرکاری وکاہچرائی اراضی پر ناجائز قبضہ کرنے والے افراد کے خلاف سخت قانونی کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔انہوںنے ایسے افرادکے خلاف کارروائی کے لئے تمام تحصیلوں میںروزانہ بنیادوں پر ایک وسیع مہم شروع کرنے پر زوردیا ہے تاکہ سڑکوں،قومی شاہرائوں اورسرکاری وکاہچرائی اراضی کو غیر قانونی تجاوزات سے چھڑالیاجائے۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ سرکار نے 78937کاہچرائی اور48896کنال اراضی کو غیر قبضے سے چھڑالیا ہے۔سرکاری ذرائع نے کہا کہ غیر قانونی تجاوزات سے خالی کرائی جارہی اراضی رپ سرکاری سکول عمارتیں،صحت مراکز ،کیمونٹی ہال،کھیل میدان ،پنچایت گھر ،فائر ٹینڈر اسٹیشن اوردیگر عوامی لازمی خدمات  کے لئے مراکز قائم کئے جائیں گے۔     سولڈ ویسٹ منیجمنٹ کو عوامی تحریک بنانے پر زور

کشمیر میں خوف ودہشت کے ماحول کا خاتمہ ضروری

جموں //ریاستی گورنر ستیہ پال ملک کے نومنتخب شدہ مشیر فاروق خان نے کہاکہ مرکزی حکومت کشمیر میں خوف و دہشت کا ماحول ختم کرنے جارہی ہے جس کی وجہ سے کشمیرکے لوگ بھارت ماتا کی جئے کا نعرہ لگانے سے ڈرتے ہیں ۔جموں سیول سوسائٹی کی طرف سے منعقد کی گئی استقبالیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے فاروق خان نے کہا’’میں کشمیر سے بھی اتنا ہی پیار کرتاہوں جتنا جموں سے ،جس کی وجہ زمین نہیں بلکہ کشمیر کے لوگ ہیں جنہوںنے اپنے آپ کو بھارت کے ساتھ منسلک کیا لیکن جنگجوئوں کی دھمکیوں کے باعث یہ قبول کرنے سے کتراتے ہیں ‘‘۔ریاست میں ملی ٹینسی مخالف پہلی ٹاسک فورس جسے سپیشل آپریشن گروپ بھی کہاجاتاہے،کے اولین سربراہ نے کہا’’ہمیں کشمیر کے لوگوں کے دلوں سے خوف و دہشت کو ختم کرنے کی ضرورت ہے جو انہیں بھارت ماتا کی جئے کا نعرہ نہ دینے پر مجبو کرتاہے ،ہمیں انہیں حوصلہ دینے کی ضرورت ہے تاک

پنڈت برادری کا تہہ دل سے خیر مقدم | تاہم الگ بستیاں بسانے کی مخالفت ہوگی:حریت گ

سرینگر//حریت (گ)نے کشمیری پنڈتوں کی وطن واپسی سے متعلق جاری بحث پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ حریت اپنے پنڈت بھائیوں کی وادی واپسی کی ہر طرح سے اور ہر وقت حامی رہی ہے، البتہ وہ انہیں علیحدہ کالونیوں میں بساکر سماج سے الگ تھلگ کرنے کی ماضی میں بھی مخالف رہی ہے اور آئندہ بھی وہ اسطرح کی کوششوں کی مزاحمت کرے گی۔ حریت نے اپنے دیرینہ موقف دہراتے ہوئے کہا کہ ہم روز اول سے ہی پنڈت برادری کو اپنے پڑوسیوں کے ساتھ یہاں کی روایات کے تحت رہنے کی دعوت دیتے آئے ہیں۔ پنڈت برادری کشمیری قوم کا ناقابل تنسیخ حصہ ہے جس کا اظہار بار بار یہاں کی قیادت نے کیا ہے کہ ہم تہہ دل سے پنڈت بھائیوںکی وادی واپسی کا خیرمقدم کرتے ہیںکہ وہ اسی طرح واپس آئیں جس طرح یہاں ہزاروں پنڈت گھرانے اپنے مسلمان بھائیوں کے ساتھ رہ بس رہے ہیں۔ ہمارا یہ دعویٰ ہے کہ بھارت کے شہروں میں وہ اتنے محفوظ نہیں جتنا وہ یہاں ہیں۔ یہاں کی مسل

ریڈی میڈ لیڈراورجماعتیں آر ایس ایس کے آلہ کار | ریاست کو اندر سے کھوکھلا کرنے کیلئے باضابطہ مشینری کار فرماء: ساگر

سرینگر// نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے کہاہے کہ ہماری صفوں میں نفاق ڈال کر ہماری آواز کو بے وزن کرنے کیلئے باضابطہ طور پر ایک مشینری کام کررہی ہے اور ہماری ریاست کو اندر سے کھوکھلا کرنے کیلئے ایک میکانزم کے تحت وادی میں نت نئی سیاسی جماعتیں اور اتحادوں کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے اور ان ریڈی میڈ لیڈران کے منہ میں دلکش اور فریبی نعرے ڈالے جارہے ہیں۔علی محمد ساگر نے پارٹی ہیڈکوارٹر پر دیوسر کنڈی اور شمالی کشمیر سے وابستہ کارکنوں اور عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقعے پر سینئر پارٹی لیڈران چودھری محمد رمضان، جسٹس توقیر احمد شاہ، محمد شفیع شاہ، پیر آفاق احمد ، ایڈوکیٹ شوکت میر اور عمران نبی ڈار بھی موجو دتھے۔ علی محمد ساگر نے کہا کہ اتحاد و اتفاق میں ہی کشمیر کا مستقبل محفوظ ہے اور ہمیں ہر اُس سازش اور منصوبہ کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہے کا مقصد ہماری آواز کو تقسیم

کریری بارہمولہ کے جنگلات محاصرہ اور تلاشیاں

بارہمولہ //فورسز نے شمالی کشمیر کے کریری بارہمولہ کے جنگلات کا بڑے پیمانے محاصرہ کیا اورتلاشی کارروائی عمل میں لائی ۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ فورسز کو ایک مصدقہ اطلاع تھی کہ کریری بارہمولہ علاقے کے جنگلات میں کچھ جنگجو موجود ہیں جس کی بنا پر سوموار کو علی الصبح فوج کی 52 آر آر،46 آر آر، ایس او جی اور سی آر پی ایف نے ایک مشترکہ کاروائی کے دوران پورے علاقے کو محاصرے میں لے کر بڑے پیمانے پر  تلاشی کاروائی کی جو آخری اطلاع ملنے تک جاری تھی ۔ادھر فوج، فورسز اور سی آر پی ایف نے مشترکہ طور جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام کے کیموہ علاقے میں جنگجوئوں کے موجود گی کی اطلاع ملنے کے بعدعلاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا۔ذرائع کے مطابق فورسز کا یہ آپریشن وانی محلہ کھڈونی میں فوج، سی آر پی ایف اور ایس او جی اہلکاروں کی ایک مشترکہ ٹیم نے شروع کیا ہے جس دوران علاقے کوجانے والی تمام

کھائن کنگن میں نوجوان غرقآب

کنگن//کھائن کنگن میں ایک سولہ سالہ طالب علم نہانے کے دوران غرقآب ہوا۔کشمیر عظمیٰ کو ملی تفصیلات کے مطابق وسطی ضلع گاندربل کے کھانن کنگن کے مضافاتی علاقے میں اس وقت کہرام مچ گیا جب ایک 16سالہ طالب علم عاقب احمد ماگرے ولد غلام رسول ماگرے ساکن کھانن کنگن نہانے کے دوران پاور کنال میں ڈوب گیا ۔اطلاع ملتے ہی مقامی لوگ اور کنگن پولیس جائے حادثہ پر پہنچ گئے اور لاش کو تلاش کرنے لگے ایس ایچ او پولیس سٹیشن کنگن ایس آئی سجاد احمد کھانڈے نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ مذکورہ طالب علم کی لاش برآمد کی گئی ھے۔     

مزید خبریں

کشمیری پنڈتوں کا کھلے دل سے استقبال علیحدہ بستیوں کا قیام ناقابل قبول: پی ڈی پی  سرینگر// پی ڈی پی کے یوتھ لیڈر انجینئر نذیر احمد یتو نے کشمیری پنڈتوں کے لئے علیحدہ کالونیوں کا قیام سے متعلق گورنر کے بیان پر ناقابل قبول قرار دیا ۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہہ یہ کشمیر کے تمدنی اخلاق کے خلاف ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ کشمیری پنڈت وسح المژرب کشمیری سماج کا ناقابل تنیخ حصہ ہیں لہذا انکے لئے علیحدہ کالونیوں اور بستیوں کے قیام سے پنڈتوں اور مسلمانوں کے درمیان خلف پیدا ہوگی۔ انہوں نے کہا ہے کہ کشمیری مسلمان اپنے پنڈت بھایوں کا کھلے دل سے خیر مقدم کرینگے اور انہیں اپنے علاقوں میں اپنے گھروں کے اندر جگہ دینگے لیکن علیحدہ بستیوں کی مخالفت کی جائیگی۔     انتظامیہ اور عوام میں خلیج بڑھنے لگی  افسران زیادہ سے زیادہ متحرک رہیں:سجاد لون سرینگر//پیپلز کانفرن

وادی کے 42ایجوکیشن زون سربراہوں کے بغیر

سرینگر //وادی کے 42ایجوکیشن زونوں میںسربراہوں کی کرسیاں خالی پڑی ہیں اور محکمہ تعلیم ان اسامیوں کو پُر کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکا ہے جبکہ کئی زون کے ڈی ڈی او اختیارات کیلئے فائلیں بھی پچھلے کئی ماہ سے سکریٹریٹ میں پڑی ہیں اور اُن پر کوئی دھیان نہیں دیا جاتا ۔محکمہ ایجوکیشن میں موجود ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ پوری وادی میں 42ایجوکیشن زون ایسے ہیں جہاں کوئی بھی مستقل زونل ایجوکیشن افسر موجود نہیں ہے اور نتیجے کے طور پر ان زونوں میں کام کاج مکمل طور پر مفلوج ہو چکا ہے ۔صرف کپوارہ ضلع کے ہی چار ایجوکیشن زون ایسے ہیں جہاں پچھلے کئی ماہ سے کوئی بھی زونل ایجوکیشن افسر موجود نہیں اور وہاں پر کام کاج مکمل طور پر مفلوج ہے ۔اسی طرح اننت ناگ ، کپوارہ ، بارہمولہ ، بانڈی پورہ گاندربل ، کولگام ، اننت ناگ پلوامہ اور شوپیاں کے کئی ایجوکیشن زونوں کا حال بھی ایسا ہی ہے ۔ان زونوں کے تحت آنے

پکھرپورہ، بانڈی پورہ اور پونچھ میں غرقآبیاں

سری نگر  //پکھر پورہ،بانڈی پورہ اور پونچھ میں غرقابی کے واقعات میں ایک بائیس بر س کا نوجوان اور2کمسن بچے لقمہ اجل بن گئے۔پکھرپورہ میں ایک7سالہ بچہ نالہ حقری یاجی میں گرنے سے لقمہ اجل بن گیا جس کی وجہ سے پورے علاقے میں صف ماتم بچھ گئی۔بڈگام کے پکھر پورہ اور پلوامہ کے درمیان گزرنے والا نالے عوام کے لئے موت کا کنواں ثابت ہو رہا ہے اور نالے کا باندھ اور رابطہ پل نہ ہونے کے نتیجے میں تاحال متعدد افراد ڈوب کر لقمہ اجل بن گئے۔ا س دوران علاقے میں سنیچر کی شام ایک اور دلدوز حادثے میں ایک7سالہ طالب علم محمد ایان ولد معراج الدین ساکن پکھر پورہ نالے کے کنارے گزر رہا تھا جس دوران اس کا پیر پھسل گیا اوروہ نالے میں ڈوب گیا۔ اس دوران اگر چہ مذکورہ طالب علم کو فوری طور اسپتال منتقل کیا گیا تاہم وہ بعد میںدم توڑ بیٹھا ۔اس دوران طالب علم کی لاش جب آبائی گھر پہنچائی گئی تووہاں کہرام مچ گیا۔مقامی لوگ

خاندانی سیاست والے13جولائی کے شہداء کوخراج عقیدت اداکرنے کے حقدار نہیں :سجادلون

سرینگر// پیپلز کانفرنس کے چیرمین سجاد غنی لون نے کہا ہے کہ خاندانی سیاست کرنے والوں کو13جولائی 1931کے شہدا ء کو خراج عقیدت ادا کر نے کا کو ئی حق نہیں ہے ۔پارٹی کے پبلک آئوڑ ریچ پروگرام ’’سلام و کلام ‘‘ کے تحت رفیع آباد بارہمولہ میں ہزاروں پارٹی کارکنوں کے اجتماع سے خطاب کر تے ہو ئے سجا د غنی لون نے کہا کہ کل 13جولائی تھا اور ہم 1931کی جدو جہد کے شہداء کو خراج عقیدت ادا کر رہے تھے ۔کیا میں فاروق عبد اللہ سے ایک سوال پوچھ سکتا ہوں اگر 13جولائی کو شخصی راج کی زیادتیوں کیلئے یا د کیا جا تا ہے تو پھر فاروق عبداللہ کے دور اقتدار میں ہوئے قتل عام کو یاد کر نے کیلئے کو نسی تاریخ کا تعین کر یںگے ۔سجاد لون نے کہا کہ یہ سراسر منافقت ہے ،آپ چاہتے ہیں کہ لوگ اُن شہدا ء کو یاد کریں جنہوں نے آزادی ،وقار اور بااختیار بنانے کی مقدس جد و جہد میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ۔