الیکشن کمیشن۔۔۔ حقائق کا ادارک کرے!

الیکشن کمیشن کے جموںوکشمیر میں پارلیمانی انتخابات کے ساتھ ساتھ ریاستی اسمبلی کے لئے انتخابات نہ کرانے کے فیصلے پر جہاں ریاست کے اندر مختلف سیاسی جماعتوں کی طرف سے برہمی کا اظہار کیا جا رہا ہے، وہیں ملکی سطح پر بھی متعدد سیاسی حلقوںنے اس فیصلے کو غیر منصفانہ اور غیر دانشمندانہ قرار دیتے ہوئے اس پر نظر ثانی کرنے کےلئے کہا ہے۔ حالانکہ چھ ریاستوں کے اندر پارلیمانی انتخابات کے متصل اسمبلی چنائو کرانے کا باضابطہ اعلان کیا گیا ہے مگر جموںوکشمیر کے معاملے کو سیکورٹی و جوہات کو بنیادبنا کر لٹکائے رکھا گیا ہے۔ سیاسی حلقوں کی جانب سے اب یہ سوال کیا جا رہاہے کہ اگر مرکزی سرکار کا دعویٰ ہے کہ ریاست کے اندر صورتحال حکومت کے کنٹرول میں ہے تو پھر اسمبلی انتخابات کو لٹکائے  رکھنے کے پس پردہ کیا عزائم کا ر فرماء ہیں۔ گزشتہ دنوں وزیراعظم نریندر مودی نے پارلیمانی الیکشن کے حوالے سے عوام کو یہ پیغام د

تازہ ترین