مغل شاہراہ کی بحالی تعطل کاشکارکیوں؟

خطہ پیر پنچال کو وادی کشمیر سے ملانے والی تاریخی مغل شاہراہ پچھلے لگ بھگ پانچ ماہ سے بند ہے اور آئندہ دو ہفتوں تک اس کی بحالی کے آثار نظر نہیں آرہے کیونکہ پہلے ہی تاخیر سے شروع ہوئے برف ہٹانے کے کام کو ٹھیکیداروں کی ہڑتال اور بار بار پسیاں گرآنے کے سلسلے نے مزید تعطل کاشکار بنادیاہے۔گزشتہ ماہ حکام نے یقین دلایاتھاکہ اپریل کے تیسرے یا چوتھے ہفتے شاہراہ کو ٹریفک کیلئے بحال کردیاجائے گالیکن اب ایسا کہاجارہاہے کہ 30اپریل تک اس کے بحال ہونے کا کوئی امکان نہیں ۔ اگرگزرے دو برسوںکی ہی بات کی جائے تو معلوم ہوتاہے کہ جہاں 2018کو یہ شاہراہ 30مارچ کو ٹریفک کیلئے کھول دی گئی تھی وہیں2017میں اسے اس سے بھی ایک ہفتہ قبل یعنی 22مارچ کو ہی بحال کردیاگیاتھا تاہم اس مرتبہ مارچ تو دور اپریل کا مہینہ بھی گزرتاجارہاہے اور کام کی رفتار کو دیکھتے ہوئے ایسا لگتانہیں کہ اس مہینے کے اواخر تک بھی خطہ پیر پنچا

تازہ ترین