فکر وعمل کا اتحاد

وادی ٔکشمیر کو تاریخ میں یہ اعزاز و امتیاز حاصل رہاہے کہ خاصا نِ خدا کے دوش بدوش حکمائے اخلاق اور سماجی اصلاح کاروں نے اپنا خو ن جگر پلا پلا کر اس خطۂ مینو نظیر کو انسا نی اقدار اور مذہبی وراداری سے روشناس کرا یا۔ یہ اسی کا ثمرہ ہے کہ لا کھ خرا بیو ں اور کو تا ہیو ں کے باوجو د اور زور زبردستوں کی ماریں سہتے ہو ئے بھی اہل ِ کشمیر من حیث القوم زندہ وپائندہ ہیں۔ تا ریخ شاہد عادل ہے کہ اولیاء اللہ نے کشمیر یو ں کو دین ومذہب کی انسانیت نو از تعلیما ت کا شعور بخشنے کے بین بین کشمیری سماج کوتہذ یب، فنو ن ، ہنر مندیوں،صنعت ودست کاریوں اور ہمچو قسم کی معاشی سر گرمیو ں سے بہرہ ور کیا تو ارض ِ کشمیر کو خوش حالی کے علاوہ ایک فخر یہ تشخص عطا ہوا۔ اس تشخص اورانفرادیت کاچراغ آندھیوں میں بھی جوں توں جلتا رہا۔ حق یہ ہے کہ ان حوالوں سے ہم سب فرداًفرداً حضرت امیر کبیر شاہ ہمدا ن کی اولوالعزم شخصیت سے ل

تازہ ترین